why microsoft allows piracy 130

کیا مائیکروسافٹ ونڈوز کی پائیریسی بند کرنے کی طاقت رکھتی ہے

ہم جب بھی کسی دوکان سے لیپ ٹاپ یا کیمپیوٹر لیتے ہیں تو اس میں ہمیں پہلے سے ہی کوئی نہ کوئی ونڈوز انسٹال ہوئی ملتی ہے۔ہم بچپن سے ونڈوز کو استعمال کرتے آ رہے ہیں اور اس کو چلانے کے لئے ہم نہ کسی اکیڈمی جاتے ہیں نہ کسی ٹیوٹر سے سیکھتے ہیں، بلکہ خود بہ خودآہستہ آہستہ اس کو سیکھتے چلے جاتے ہیں۔اگر آپ انٹرنیٹ پر ونڈوز کی قیمت دیکھیں گے تو آپ کو پتہ چلے گا کہ یہ ہزاروں میں بکتی ہے، لیکن ہم اس کو فری میں آنلائن ٹورنٹ سے ڈاؤنلوڈ کر لیتے ہیں اور اپنے لیپ ٹاپ یا کیمپیوٹر میں انسٹال کر لیتے ہیں۔ کیا مائیکروسافٹ، اتنی بڑی کمپنی ، اس کے پاس اتنا بھی کنٹرول نہیں ہے کہ وہ جتنے بھی آنلائن فری میں ونڈوز سیٹ اپ پڑے ہیں ان سب کو بند کر سکے تا کہ ان کو نقصان نہ ہو؟ تو اس کا جواب ہے کہ ایسا بلکل بھی نہیں ہے۔

مائیکروسافٹ کیوں پائیریسی بند نہیں کرتی؟

مائیکروسافٹ کے مالک بِل گیٹس کو کون نہیں جانتا۔ یہ ایک وقت میں دنیا کی طاقتور ترین کمپنی سمجھی جاتی رہی ہے۔ اگر یہ چاہیں تو آپ اپنے لیپ ٹاپ میں ایک لفظ بھی نہ لکھ سکیں۔لیکن یہ جان بوجھ کر اپنےپروڈکٹ ونڈوز کی پائیریسی ہونے دیتے ہیں تا کہ زیادہ سے زیادہ لوگوں کو اس کی عادت ہو جائے۔جب لوگوں کو اس کی عادت ہو جائے گی تو وہ ایسی پروڈکٹ لانچ کریں گے جس کو نہ چاہ کر بھی لوگوں کو خریدنا ہی پڑے گا۔

ونڈوز کافی حد تک ایک آسان آپریٹنگ سسٹم ہے جس کو آرام سے کوئی بھی سیکھ سکتا ہے۔ لیکن دوسرے آپریٹنگ سسٹمز جیسا کہ میک او ایس، لائنکس وغیرہ اتنے آسان نہیں ہیں جن کو آرام سے سیکھا جا سکے۔ خاص طور پر لائنکس جیسے آپریٹنگ سسٹمز۔لائنکس ایک فری آپریٹنگ سسٹم ہے لیکن پھر بھی اس کو استعمال کرنے والے کم ہیں کیونکہ یہ زیادہ تر کمانڈسے کام کرتا ہے جو ہر کوئی نہیں یاد رکھ سکتا۔دوسری طرف ونڈوز کی پائیریسی کی وجہ سے اس کی فری میں پبلسٹی ہو رہی ہے۔ جس پبلسٹی کے لئے لوگ کروڑوں روپے لگا دیتے ہیں وہ مائیکروسافٹ کی اس سے مفت میں ہوتی رہتی ہے۔ اگر کوئی بندہ بچپن سے لے کر جوانی تک ونڈوز کو ہی استعمال کرتا رہے اور وہ کسی آفس میں جائے، وہاں پر اسے کوئی دوسرا آپریٹنگ سسٹم دیا جائے استعمال کے لئے تو وہ اسے استعمال نہیں کر پائے گا اور ونڈوز کی ہی ڈیمانڈ کرے گا۔ اس طرح اس کمپنی کو ونڈوز اپنے ایمپلائیز کو دینے پڑیں گے۔ اگر وہ ونڈوز کو خریدتے نہیں بھی ہیں تو ان کو ونڈوز میں چلنے والے دوسرے سافٹویئرز خریدنا ہی پڑیں گے، جن کا کریک ورژن آنلائن دستیاب نہ ہو۔ اس طرح مائیکروسافٹ پیسہ کماتی رہتی ہے۔

امید ہے آپ کو یہ انفارمیشن پسند آئی ہوگی۔ ایسے ہی آرٹیکلز پڑھنے کے لئے انگلی پوائنٹ کو سبسکرائب کریں اور فیس بک پیج کو لائک کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں