36

قادیانی ایک فرقہ یا فتنہ. غلام احمد قادیانی کون

مرزا غلام احمد قادیانی 1839 کو پیدا ہوا ابتدائی تعلیم مولوی گل علی شاہ سے حاصل کی۔ کچھ عرصے سے اپنے والد کے ساتھ انگریزی کچہریوں کے چکر بھی لگائے۔ آبائی پیشہ زمینداری تھا۔ آباؤ اجداد سکھوں اور انگریزوں کے ملازم رہتے آئے تھے۔ والد کا نام غلام مرتضی تھا۔ اس نے قانون کا امتحان دیا مگر فیل ہونے پر تعلیم سے دل اچاٹ ہوگیا۔ کمزوری دماغ کا مرض پوری عمر جوانی سے رہا، اسہال، سردرد، شوگر وغیرہ امراض موصوف کی زندگی کے ساتھی تھے۔ 26مئی 1908 کو لاہور میں موصوف کا شدت اسہال سے ہی دم نکل گیا۔

:جھوٹی نبوت

مرزا نے 1879 میں نبوت کی بنیاد رکھنا شروع کی، جو کہ گول مال الہام اور کشف وغیرہ پر مبنی تھی، جو کہ براہین احمدیہ میں موجود ہے۔ مرزا غلام احمد قادیانی نے نبوت کا دعوی کر کے دجالوں کی فہرست میں اپنا نام لکھوایا۔ اپنی دنیا سنوارنے کی خاطر کروڑوں مسلمان کے عاقبت برباد کی گئی۔ 1889 کے کشف و الہام کے آنے کے بعد ایک نئی سازش رچائی۔ چنانچہ 1990 میں یہ کہنا شروع کیا کہ حضرت عیسیٰ علیہ السلام اور ابنِ مریم میں خود ہوں(ناعوذ بااللہ) خود لکھتا ہے کہ مریم کی طرح عیسی کی روح مجھ میں نفخ کی گئی ہے، اور استعارہ کے رنگ میں مجھے حاملا ٹھہرایا گیا، اور کہیں مہینے کے بعد جو 10 مہینے سے زیادہ نہیں، بذریعہ اس الہام کے مجھے حضرت مریم سے حضرت عیسیٰ بنایا گیا۔ پس اس طور سے پہلے ابنِ مریم ٹھہرا (استغفراللہ)۔

:گستاخیاں

یہ شخص انبیاء کرام کا نہیایت گستاخ تھا۔ چناچہ حضرت عیسیٰ علیہ السلام کے بارے میں لکھتا ہے، کہ عیسائیوں نے بہت سے آپ کے معجزات لکھے ہیں مگر حق بات یہ ہے کہ آپ سے کوئی معجزہ ظاہر نہیں ہوا، اور اس دن سے آپ سے معجزہ مانگنے والوں کو گندی گالیاں دیں، اور ان کو حرام کار اور حرام کی اولاد ٹھہرایا۔ اسی روز سے شریفوں نے آپ سے کنارہ کیا۔

Imam Hussain ki Ghustakhi(ناعوذ بااللہ)

;

Imam Hussain ki Ghustakhi(ناعوذ بااللہ)

اس قادیانی بد زبان کو دیکھو، سیدنا حضرت عیسی علیہ السلام کی کیسی توہین کرتا ہے۔ یہاں تک کہ انہیں ان کے ماں کو فحش گالیاں دیتا ہے۔ یہاں تک کہ دو سو انبیاء کوجھوٹا لکھتا ہے۔ حضور اقدس صلی اللہ علیہ وسلم کی شان اقدس پر بھی حملے کیے۔ دعوی نبوت کے بعد مرزا کی شیطانی رگ مزید پھڑکی تو اس نے خدائی کا دعویٰ کرڈالا۔علاوہ ازیں لکھتا ہے کہ میں نے نیند میں اپنے آپ کو ہو بہواللہ دیکھا اورمیں نے یقین کرلیا کہ اللہ میں ہوں۔ اور پھر اس نے آسمان اور زمین بنائے اور کہا، آسماں کو ستاروں کے ساتھ سجایا ہے۔

:پیشن گوئیاں

دیگر جھوٹی نبوت کے دعویداروں کی طرح مرزا غلام احمد قادیانی نے بھی کچھ پیشن گوئیاں کیں تھیں۔ مگر ان کا انجام بھی مسلیمہ کذاب کی طرح ہوا۔ اپنے لیے ایک لڑکے کی پیشن گوئی کی تھی جس کی نسبت کہا تھا کہ انبیاء کا چاند ہو گا اور بادشاہ اس کے کپڑوں سے برکت لیں گے بگر شانِ الہٰی کہ اس کی بیٹی پیدا ہوئی اس پر کہا کہ وہی سمجھنے میں غلطی ہوئی ہے، اب کی بارجو ہوگا وہ لڑکا انپیاء کا چاند ہوگا۔ اس بار اس کے ہاں بیٹا پیدا ہوا۔ مگر کچھ روز جی کر مر گیا۔ پس بادشاہ کیا کسی محتاج نے بھی اس کے کپڑوں سے برکت نہ لی۔ ایک اور پیشن گوئی آسمانی بیوی کی تھی اپنی چچا زاد بہن احمدی بیگم کو لکھا، کہ اپنی بیٹی محمدی بیگم میرے نکاح میں دے دے اس نے صاف انکار کیا۔ اس پر اس نے دھمکیاں دیں اور کہا کہ وہی آ گئی ہے کہ میرا نکاح آسمان پر ہو گیا ہے، تو دوسری جگہ اس کا نکاح کرے گی تو ڈھائی تین برس کے اندر اس کا شوہر مر جائے گا، اور اس خدا کی بندی نے ایک نہ سنی۔ سلطان محمد خان سے اپنی بیٹی کا نکاح کردیا آسمانی نکاح دھرے کا دھرا رہ گیا نہ وہ شوہر مرا نہ کچھ اور ہوا۔ اور اس عورت کے اس شوہر کے حصے سے بچے بھی پیدا ہوئے۔

:جماعتیں

مرزا غلام احمد قادیانی کی موت کے بعد اس کے پیروکار دو جماعتوں میں بٹ گئے ایک جماعت احمدی کہلائی، جو اُسے بمبلغِ اسلام مانتی ہے اور دوسری جماعت قادیانی، جو اُسے نبی مانتی ہے۔ علماء اسلام کے اس کے خلاف قلمی جہاد بھی قابل ستائش ہے 1973 کے آئین میں ان کو غیر مسلم قرار دیا گیا۔ جو کہ ایک بڑا زبردست اور تاریخی فیصلہ تھا۔ کیونکہ قادیانیوں کویورب اور امریکہ کی سپورٹ حاصل ہے اس لیے یہ لوگ آج بھی پاکستان میں خفیہ طور پر اور یورپ میں اعلانیہ طور پر اپنے مذہب کی تبلیغ جاری رکھے ہوئے ہیں۔ تشویش کی بات یہ ہے کہ یہ لوگ بھی اسلام اور قران کا نام استعمال کر رہے ہیں۔ ان کی بے شمار ویب سائٹس اسلام کے نام پر رجسٹرڈ ہیں۔ اسلام کی آڑ میں اپنے مذہب کی ترویج کر رہے ہیں اور قرآن کی اپنی مرضی سے تشریحات کر کے عام لوگوں کو گمراہ کر رہے ہیں۔ اور ہمارے بھولے بھالے مسلمانوں کو تو پتا بھی نہیں چلتا کہ وہ کس جال میں پھنس گئے ہیں۔ اللہ تعالی ہمارے مسلمانوں کو اس فتنے سے تیری پناہ میں رکھے۔ آمین

:لعنتِ جاریہ

اگر تاریخ پر نظر دوڑائی جائے تو مرزا غلام احمد قادیانی واحد شخص سے جس پر تاریخ میں سب سے زیادہ لعنت کی گئی ہے۔ تو میری آپ سب سے گزارش ہے کہ اس پر لعنت بھیج کر اس آرٹیکل کو زیادہ سے زیادہ شئیر کیجئے تاکہ اس پر لعنت بھیجنے کا ناختم ہونے والے سلسلہ جاری رہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں