پب جی کو پاکستان میں بین کرنے کا نوٹس. یہ گیم موت کا سبب کیسے بنی؟

.لاہور ہائیکورٹ نے ویڈیو گیم پر پابندی کے لیے درخواست پاکستان ٹیلیکمیونیکیشن اتھارٹی پی ٹی اے کو قانون کے مطابق فیصلہ کرنے کا حکم دیتے ہوئے درخواست نمٹا دی ہے لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس عاطر محمود کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے ویڈیو گیم پر پابندی کی درخواست پر سماعت کی یہ درخواست شہری فیضان مقصود نے دائر کی تھی

آپ کو بتاتے چلیں۔ پب جی گیم پچھلے کچھ سالوں سے سب سے زیادہ کھیلی جانے والی گیم بن چکی ہے۔ اس گیم میں 100 لوگوں کو ایک انجان جگہ پر اتارا جاتا ہے، جہاں پر انہیں باقی کے لوگوں کو مار کر اپنا مشن پورا کرنا ہوتا ہے۔ پاکستان میں لانچ ہونے کے بعد کافی علماء کی طرف سے اس پر فتوے بھی لگائے گئے تھے، لیکن اس کی مقبولیت میں کمی نہ ہو سکی۔

اس گیم کی وجہ سے دیگر بہت سے ممالک میں نوجوانوں کی اموات بھی دیکھنے میں آئی ہیں۔ پچھلے سال انڈیا میں ایک نوجوان کی موت کا سبب بھی یہی گیم بن گئی۔ اس کی بہن کا کہنا تھا کہ اسکا بھائی معمول کی طرح گیم کھیلنے میں مصروف تھا۔ اور اچانک ہینڈ فری اتار کر چلانے لگا، ممی،ممی۔ اور اچانک گھر گیا۔ اسے ہسپتال لے جایا گیا لیکن اس کی موت واقع ہو گئی۔

ڈاکٹر کا کہنا تھا کہ اس گیم کو کھیلنے والا اس میں اتنا مگن ہو جاتا ہے کہ جو جو گہم کے کیریکٹر کے ساتھ ہوتا ہے پلیئر اس چیز کو محسوس کرنا شروع ہو جاتا ہے۔ اور اگر گیم میں کیریکٹر کو بم لگے تو اس کی گرمائیش کو وہ بھی محسوس کرتا ہے۔

نوجوان کے باپ کا کہنا تھا کہ ان کا بیٹا پڑھائی میں بہت اچھا تھا، لیکن کچھ دنوں سے اس نے گیم کھیلنا شروع کر دیا ۔ بہت زیادہ کھیلنے کی وجہ سے میں نے اس سے موبائیل لے لیا۔ لیکن اس کے بعد احتجاج کے طور پر اس نے کھانا کھانا چھوڑ دیا جس کی وجہ سے مجھے موبائیل واپس دینا پڑا۔

اب کچھ دنوں پہلے پاکستانی شہری فیضان مقصود کی جانب سے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ یہ گیم بچی بچے اور نوجوان نسل کی شخصیت پر منفی اثر ڈال رہی ہے اس فیصلہ کی کمی اور شدت پسندی بڑھی ہے درخواست میں استدعا کی گئی کہ گیم کو پلے سٹور سے ہٹا دیا جائے جس پر لاہور ہائیکورٹ نے دلائل سننے کے بعد پاکستان ٹیلیکمیونیکیشن اتھارٹی کچھ ہفتے میں فیصلہ کرنے کا حکم دیتے ہوئے درخواست نمٹادی ہے لاہور ہائیکورٹ میں دائر درخواست میں وفاقی حکومت پی ٹی اے اور ایف آئی اے کو فریق بنایا گیا تھا۔ فریق کی جانب سے استدعا کی گئی ہے کہ عدالت پب جی گیم پر پابندی عائد کرنے کے احکامات جاری کرے۔

کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ گیم کا مسلہ نہیں ہے یہ کھیلنے والوں کا قصور ہے، جو اس میں اتنا مگن ہو جاتے ہیں کہ انہیں باقی کچھ محسوس ہی نہیں ہوتا۔ کیا آپ بھی اس گیم کو کھیلتے ہیں اور اگر کھیلتے ہیں تو کیا آپ اس کو پاکستان میں بین کرنے کی مذمت کرتے ہیں۔ نیچے کمینٹ کر کے لازمی بتائیں۔