خنزیر کی پیدائش کس طرح ہوئی۔

خنزیر کی پیدائش کا تعلق براہ راست طوفان نوح اور حضرت نوح علیہ السلام کی کشتی سے وابستہ ہے (حافظ عماد الدین ابولفدا اسمائیل ابن کثیر تاریخ ابن کثیر البدایہ والنہایہ جلد نمبر 1 میں فرماتے ہیں) حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے مروی ہیں کہ حضرت عیسیٰ علیہ السلام کے حوارین نے آپ علیہ السلام سے کہا کہ کیا ہی اچھا ہوتا کہ آپ علیہ السلام ہمارے لئے کسی ایسے آدمی کو زندہ فرمائیں جو ہمیں کشتی نوح علیہ سلام کے متعلق معلومات فراہم کرے تو حضرت عیسی علیہ السلام نے مٹی کے ایک ڈھیر سے تھوڑی سی مٹی اٹھائی اور فرمایا کہ یہ نوح کی قوم سے کسی کی مٹی ہی حضرت عیسی علیہ السلام نے اس مٹی پر اپنے لاٹھی ماری تو اس مٹی سے ایک بوڑھا آدمی اٹھ کھڑا ہوا اس بوڑھے آدمی نے حضرت عیسیٰ علیہ السلام اور آپ علیہ السلام کے حواریوں کو بتایا کہ حضرت نوح علیہ السلام کی کشتی 1200 گز لمبی تھی اور 600 گز جوڑی تھی اور اس میں تین منزلیں تھیں پہلی منزل میں جنگلی جانور تھے دوسری منزل میں انسان تھے اور تیسری منزل میں پرندے تھے جانوروں کی وجہ سے کشتی میں گند پڑ گیا۔

یہ بھی پڑھیں  کیسے سم سے آپکی موجودہ لوکیشن نکال لی جاتی ہے؟ حیرت انگیز انکشافات
pig

جو کہ حضرت نوح علیہ السلام کے لیے باعث پریشانی تھا تو اللہ تعالیٰ نے حضرت نوح علیہ السلام کی طرف وحی بھیجی تھی کہ تم ہاتھی کی دم کو پکڑ کر جھنجوڑتے یعنی کھینچو تو حضرت نوح علیہ السلام نے جب ہاتھی کی دم پکڑ کر جھنجھوڑا تو اس سے خنزیر نر اور مادہ پیدا ہوگئے اور وہ فورا گند اور جانوروں کی طرف چل پڑے اور سارے گند کو کھا گئے۔