252

اپنا لکھا ہوا نیوز یا آرٹیکل انگلی پوائنٹ پر کیسے پبلش کیا جا سکتا ہے

انگلی پوائنٹ پاکستان کا نیوز اور انفارمیشن پلیٹ فارم ہے جہاں پر آپ کو نیوز، ٹیکنالوجی، اسلام وغیرہ سے متعلق آرٹیکلز پڑھنے اور سمجھنے ملیں گے۔ اس پلیٹ فارم کا مقصد ان چیزوں کا سامنے لانا ہے جو میڈیا آجکل نہیں بتاتا۔ یہاں پورے پاکستان سے متعلق مسائل اور ان کے حل پر بات کی جاتی ہے۔

اس ملک میں ہر کسی کو اپنی بات کرنے اور اپنا نظریہ رکھنے اور پیش کرنے کی آزادی ہے۔ اگر آپ کے پاس کوئی پلیٹ فارپ نہیں، جہاں آپ لوگوں کو اپنے خیالات کے بارے میں بیان کر سکیں اور اپنے ملک کو بہتر بنانے کے لئے نظریہ دیں سکیں، تو آیئے ’’ انگلی پوائنٹ ‘‘ پر، ہم آپ کے خیالات کو پبلش کریں گے تا کہ آپ کی آواز ہر پاکستانی عوام اور حکومت کے اہلکاروں تک جا سکے۔

اگر آپ اپنے آس پاس کوئی زیادتی کسی قسم کی ہوتی دیکھیں، جس پر میڈیا چپ ہو تو اس کو لکھ بھیجیں انگلی پوائنٹ کو۔ ہمارا وعدہ ہے کہ اُس کو عوام کے سامنے لایا جائے گا تاکہ اعلیٰ حکام کی توجہ دلائی جا سکے۔

اگر آپ کے پاس کسی بھی فیلڈ کے بارے میں انفارمیشن ہے اور آپ سمجھتے ہیں کہ عوام کو اس بارے میں علم ہونا چاہئے تو اسے بھی آپ ہمیں ای میل کر سکتے ہیں۔

:لکھنے اور ای میل کرنے کا طریقہ
۔ کسی بھی نیوز یا آرٹیکل کے بارے میں لکھنے سے پہلے کچھ باتوں کا خیال رکھنا ضروری ہے
۔ کوئی بھی نیوز فیک نہیں ہونی چاہیے۔ ادارہ اس بات کی تحقیقات کر کے پھر پبلش کرے گا۔
۔ کوئی بھی نیوز آرٹیکل صاف اور ٹاپک کے مطابق ہونا چاہیے اور ادھر اُدھر کی باتیں نہیں ہونی چاہیے۔
۔ آرٹیکل کم سے کم ۵۵۰ سے ۶۰۰ لفظوں تک ہونا چاہیے۔
۔ اپنے اصل ای میل یا نمبر سے آرٹیکل سینڈ کرنا ہے۔
۔ آرٹیکل میں کسی بھی پولیٹیکل شخصیات پر بنا کسی پروف کے الزام تراشی نہ کی ہونی چاہیے۔
۔ آرٹیکل میں حوالہ دیا ہونے پر اس کو پریفر کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑہیں: مردے کا خواب میں آ کر کوئی چیز دینا۔ اسلام میں کیسا؟

آرٹیکل لکھ لینے کے بعد آپ اُسے ہمارے ادارہ کے ای میل یا واٹس اپ نمبر پر سینڈ کر سکتےہیں press@unglipoint.com :ای میل
+92 304 8974195 :واٹس ام نمبر

اس پلیٹ فارم کا مقصد صرف اور صرف سچائی کوپھیلانا ہے، جس کی کمی آج پاکستان کے ہر علاقے میں ہے۔ اگر آپ کسی مظلوم کی بات کو آگے پیلانا چاہتے ہیں اور اپنا نام اس میں نہیں لانا چاہتے تو ادارہ آپ کی انفارمیشن کو صغہ راز رکھے گا۔

ہمارے ادارے کا کام صرف اور صرف بات کو پبلش کر کے زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانا ہے۔ اگر آپ اپنی ٹیکنالوجی سے متعلق انفارمیشن لوگوں کو بتانا چاہتے ہیں، آپ ایک عالم ہیں اور اسلام کی بات لوگوں میں پھیلانا چاہتے ہیں، ایسے مسائل پر گفتگو کرنا چاہتے ہیں، جو ہر بندے میں موجود ہیں، تو ادارہ آپ کو خوش آمدید کرتا ہے۔ آج ہی اپنا آٹیکل ای میل یا واٹس اپ کریں۔

ادارہ ’’ انگلی پوائنٹ ‘‘ یہ کام اللہ کی رضا اور اللہ کی مخلوق کے لئے کر رہا ہے۔ اگر آپ ہماری اس کوشش کو سرہانا چاہتے ہیں تو ہمیں ڈونیٹ کر سکتے ہیں۔ اسے اپنے اور اپنے دوستوں کے ساتھ شئیر کریں اور نہ ختم ہونے والا صدقہ جاریہ بنائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

31 تبصرے “اپنا لکھا ہوا نیوز یا آرٹیکل انگلی پوائنٹ پر کیسے پبلش کیا جا سکتا ہے

  1. It is perfect time to make some plans for the future and it is time to be happy. I’ve read this post and if I could I wish to suggest you few interesting things or suggestions. Perhaps you could write next articles referring to this article. I desire to read even more things about it!

  2. I usually dont commonly post on many another Blogs, however Thank you very much keep up the amazing work. Ok regrettably its time to get to school. Rene Timotheus Archle

  3. You wanted to see me, Sir?
    I was two steps into his office, my suit jacket sliding down my arms as I walked to my location between the chairs in front of his desk.
    “Something has come to my attention that might be interesting.”
    It wasn’t normal for him to blurt out what was on his mind when I was summoned to his office. We had established something of a protocol of how this was to work.
    It was akin to a tribal ritual of exchanging pleasant conversation prior to entering into serious exchange, a ritual intended to maintain civility and peace and calm prior to any interaction.
    I had thought ours was the same, though it had never been expressed or defined. I undressed and he sat back in his chair to enjoy it prior to entering into any business.
    https://telegra.ph/You-wanted-to-see-me-Sir-06-02

اپنا تبصرہ بھیجیں